عقائد و ایمانیات - حدیث و سنت

Pakistan

سوال # 164321

جب بندہ استغفار کرتا ہے تو اللہ پاک معاف فرما دیتے ہیں اور اللہ کی شان بہت بلند ہے خالی معاف نہیں فرماتے پہلے سے بڑھ کے عطا فرماتے ہیں، کیا یہ بات حدیث سے ثابت ہے ؟ بارش کا پانی جمع کرنا اور پینے کے لیے استعمال کرنا حدیث سے ثابت ہے ۔

Published on: Sep 5, 2018

جواب # 164321

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:1410-1178/sd=12/1439



(۱)اللہ تعالی کا فرمان ہے : فَقُلْتُ اسْتَغْفِرُوا رَبَّکُمْ إِنَّہُ کَانَ غَفَّارًا یُرْسِلِ السَّمَاءَ عَلَیْکُمْ مِدْرَارًا وَیُمْدِدْکُمْ بِأَمْوَالٍ وَبَنِینَ وَیَجْعَلْ لَکُمْ جَنَّاتٍ وَیَجْعَلْ لَکُمْ أَنْہَارًا (نوح) اس آیت سے معلوم ہوا کہ استغفار کی وجہ سے اللہ تعالی گناہوں کی معافی کے ساتھ رحمت کی بارش کا نزول،رزق و مال میں فراوانی وغیرہ بھی عطا فرماتے ہیں۔(۲) اس بارے میں کوئی حدیث تو نہیں ملی؛ البتہ بعض کتابوں میں مذکورہے کہ بارش کا پانی جمع کرکے اس پر /۷۰دفعہ آیت الکرسی، /۷۰دفعہ الحمد شریف اور /۷۰دفعہ تینوں قل پڑھ کر پھونکنا اور دو ماہ تک اس پانی کو پینا بیماری سے شفاء حاصل کرنے کے لیے مجرب ہے ؛ لیکن یہ صرف جائز ومباح کی حیثیت رکھتا ہے ، اس کے جواز کے لیے اس میں کسی خلاف شرع امر کا نہ ہونا ہی کافی ہے ، اس کے لیے کسی خاص حدیث کا ہونا ضروری نہیں اور بارش کا پانی جمع کرکے پینے میں کوئی حرج نہیں ہے، جائز ہے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات