عقائد و ایمانیات - حدیث و سنت

PAKISTAN

سوال # 161115

حضرت، کوئی ایسی حدیث ہے کہ آدمی نیت کرکے سو جائے میں صبح کی (فجر) نماز پڑھوں گا اور اس کی آنکھ نہیں کھلی، اور جب آنکھ کھلی تب وہ (فجر کی فرض) نماز پڑھتا ہے تو ا س کو فرض نماز کا ثواب ملتا ہے؟ یہ معمول ہے تقریباً روزانہ کا۔
براہ کرم، اس کی تصدیق مطلوب ہے۔

Published on: May 10, 2018

جواب # 161115

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:1030-871/sd=8/1439



فجر کے سلسلے میں تو مذکورہ حدیث نہیں ملی؛ البتہ تہجد کے بارے میں یہ حدیث ہے: عَنْ سُوَیْدِ بْنِ غَفَلَةَ، عَنْ أَبِی الدَّرْدَاءِ، یَبْلُغُ بِہِ النَّبِیَّ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ قَالَ: مَنْ أَتَی فِرَاشَہُ، وَہُوَ یَنْوِی أَنْ یَقُومَ فَیُصَلِّیَ مِنَ اللَّیْلِ، فَغَلَبَتْہُ عَیْنُہُ حَتَّی یُصْبِحَ، کُتِبَ لَہُ مَا نَوَی، وَکَانَ نَوْمُہُ صَدَقَةً عَلَیْہِ مِنْ رَبِّہِ (سنن ابن ماجہ)



حضرت ابودرداء رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: ”جو شخص اپنے بستر پر (سونے کے لیے) آتا ہے اور اس کی نیت ہوتی ہے کہ وہ رات کو اٹھ کر نماز پڑھے گا، پھر اس پر صبح تک نیند غالب آجاتی ہے، اس کے لیے اس کی نیت کے مطابق (ثواب) لکھا جائے گا اور اس کی نیند اس کے رب کی طرف سے اس پر صدقہ ہوگی۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات