عقائد و ایمانیات - حدیث و سنت

bangladesh

سوال # 158596

مفتیان کرام سے جاننا چاہتا ہوں کہ کھانا کھاتے وقت بیٹھنے کا کوئی خاص طریقہ منقول ہے ؟ یہ جو مشہور ہے کہ ایک یا دو گھٹنے اٹھا کر کھانا سنت ہے ، اور چار زانوں بیٹھنا خلاف سنت ہے ، اس بارے میں شریعت کی فیصلہ کیا ہے ؟ براہ کرم حوالہ سمیت جواب فرمائیں۔

Published on: Feb 20, 2018

جواب # 158596

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa: 628-569/L=6/1439



کھاتے وقت اس طرح بیٹھنا چاہیے جس سے تو اضع ظاہر ہو ،مثلاً :تشہد کی حالت کی طرح بیٹھنا ،بائیں پیر کو بچھا کر داہنے پیر کو کھڑا کرنا،اس طرح نہیں بیٹھنا چاہیے جو خلافِ تواضع ہو مثلاً:ٹیک لگا کر کھانا ،اپنے کو ایک طرف جھکا کر کھانا،چارزانو بیٹھ کر کھانا الا یہ کہ عذر ہو تو حرج نہیں۔ عن أبی جحیفة قال :قال النبی ﷺ لا آکل متکئاً․(مشکات:۳۶۳) أقول ان المستحسن عند الأکل الجلوس علی رکبتیہ،أو مقعیاً ،أما التربیع فجلوس قبیح․(العرف الشذی:۲/۵) ویبسط رجلہ الیسری وینصب الیمنی․(شامی:۹/۴۹۱) أحسن الجلسات للأکل الاقعاء علی الورکین ونصب الرکبتین ،ثم الجثی علی الرکبتین وظہور القدمین ثم نصب الرجل الیمنی والجلوس علی الیسار․(شامی:۱۰/۴۸۸کتاب الخنثی)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات