عقائد و ایمانیات - حدیث و سنت

india

سوال # 157169

بخاری شریف کی روایت ہے کہ اللہ کی قسم میری امت میرے بعد شرک میں مبتلا نہیں ہو سکتی تو کیا اس حدیث سے یہ بات ثابت ہوتی ہے کہ آج کے اس دور میں کوئی بھی مشرک نہیں ہے ؟

Published on: Dec 27, 2017

جواب # 157169

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:448-381/H=4/1439



حدیث شریف میں یہ نہیں ہے کہ میری امت میرے بعد شرک میں مبتلا نہیں ہوسکتی لہٰذا یہ نتیجہ بھی نکالنا درست نہیں کہ آج کے دور میں کوئی بھی مشرک نہیں ہے، البتہ حدیث پاک میں یہ ہے کہ وَإِنِّی لَسْتُ أَخْشَی عَلَیْکُمْ أَنْ تُشْرِکُوا، وَلَکِنْ أَخْشَی عَلَیْکُمُ الدُّنْیَا أَنْ تَنَافَسُوہَا ھ یعنی مجموعی اعتبار سے پوری امت شرک میں مبتلا نہ ہوگی ہاں بعض لوگ ہوں گے بخاری شریف کی شرح فتح الباری میں ہے ما أخاف علیکم أي علی مجموعکم لأن ذلک قد وقع من البعض اھ ج۳، ص۲۱۱، وہکذا في إرشاد الساري ج۲ص۴۴۰۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات