Pakistan

سوال # 151923

ویسے توپانی بیٹھ کر پینا سنت ہے لیکن آب زم زم کو لوگوں کی اکثریت کھڑے ہو کر پیتی ہے ۔ اس سلسلے میں مختلف روایات بیان کی جاتی ہیں جیسا کہ حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے بعض مواقع پر کھڑے ہو کرآب زمزم پیا تھا۔بعض لوگ کہتے ہیں کہ بی بی ہاجرہ نے کھڑے ہو کر آب زم زم پیا تھا۔بعض کا کہنا ہے کہ حاجی حج سے واپس آ کر کھڑے ہو کر آب زم زم پیتے ہیں۔بعض علما کاکہنا ہے کہ کھڑے ہو کر آب زم زم پینا مستحب ہے ۔ آب زم زم کھڑے ہو کر پینے کی اصل اور حقیقی وجہ کیا ہے ؟ کیا کھڑے ہو آب زم زم پینے سے زیادہ ثواب ملتا ہے ؟ قرآن و سنت کی روشنی میں وضاحت فرمائیں۔

Published on: Jul 18, 2017

جواب # 151923

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa: 997-983/B=10/1438



زمزم کنویں کے پاس کھڑے ہوکر رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے زمزم کا پینا ثابت ہے اسی بنا پر فقہاء نے اسے کھڑے ہوکر پینا مستحب لکھا ہے۔ اور یہ محض اس پانی کے احترام کی وجہ سے ہے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات