INDIA

سوال # 146427

جانور کے کون کون سے اعضاء کھانا حرام ہے ؟

Published on: Nov 28, 2016

جواب # 146427

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 205-149/H=2/1438



سات اجزاء کا کھانا حلال مذبوحہ جانور کے ممنوع و مکروہ ہے اور ان میں سے بہتا خون حرام قطعی ہے یکرہ تحریما علی الاوجہ من الشاة سبعة اشیاء وہو الفرج، والخصیہ، والمثانة، والذکر، والغدة، والمرارة، والدم المسفوح للاثر الوارد فی کراہة ذلک لکن فی عد الدم من المکروہ تسامح اھ ج: ۲/۷۴۳قال ابوحنیفة رحمہ اللہ تعالیٰ الدم حرام واکرہ الستة اھ زیلعی: ۶/۶۶۶وہ سات اجزاء یہ ہیں: (۱) مادہ کی فرج۔ (۲) خصیہ ۔ (۳) مثانہ یعنی پیشاب کی تھیلی۔ (۴) نر کا ذکر۔ (۵) غدود۔ (۶) پتّہ یعنی جس تھیلی میں کڑوا پانی رہتا ہے۔ (۷) دم مسفوح جو حرامِ قطعی ہے بقیہ اول الذکر چھ اجزاء مکروہ تحریمی ہیں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات