India

سوال # 61805

میرے پاس بچپن سے ہی ایک یتیم لڑکا رہتاہے، جو کہ میرے یہاں پرورش پائی ، اب وہ بالغ ہوچکا ہے اور وہ کمانے لگاہے۔میںآ پ حضرات سے یہاں پوچھنا چاہتاہوں کہ اس کی کمائی میں میرا حصہ ہوگا یا نہیں؟ جب کہ وہ کمائی مجھے دینا چاہتاہے۔ کیا میرے میراث میں اس کا حصہ ہوگا یا نہیں؟ شریعت میں اس کا کیاحکم ہے؟

Published on: Oct 22, 2015

جواب # 61805

بسم الله الرحمن الرحيم

Fatwa ID: 781-781/Sd=1/1437-U

مذکورہ یتیم بچے کی کمائی میں شرعاً آپ کا کوئی حصہ نہیں ہے، اسی طرح آپ کی میراث میں بھی اُس کا کوئی حصہ نہیں ہوگا، ہاں بالغ ہونے کے بعد اگر وہ اپنی خوشی سے آپ کو کچھ دیدے ، تو شرعاً آپ کے لیے اُس کا لینا جائز ہے۔

واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات