India

سوال # 22733

میری ایک بیٹی ہے جس کی عمر اس وقت تقریبا بائیس سال ہے، اس کا نام مہوش فاطمہ ہے، وہ مستقل بیماررہتی ہے۔ کچھ لوگوں کا کہنا ہے کہ اس نام کے بچے ہمیشہ بیماررہتے ہیں اور پڑھ لکھ بھی نہیں پاتے ۔ براہ کرم، بتائیں کہ میں کیا کروں؟ میں بہت پریشان ہوں۔ بعض لوگ کہتے ہیں کہ اس کا نام بدل دوتو یہ پریشانی دور ہوجائے گی۔ کیا ایسا کچھ ہوتاہے ؟ اس کا نام بد ل دینا چاہئے اس عمر میں پہنچ کر؟

Published on: Jul 22, 2010

جواب # 22733

بسم الله الرحمن الرحيم

فتوی(ب):1055=861-6/1431

مَہْوِشْ فاطمہ اچھا نام ہے اس کے معنی میں کوئی خرابی نہیں ہے، اس کا ترجمہ ہے چاند جیسی فاطمہ، لہٰذا مہوش فاطمہ نام رکھنے میں کوئی حرج نہیں، رہا آپ کی صاحبزادی کا بیمار مستقل رہنا تو اس کے دیگر اور بھی اسباب ظاہری اور باطنی ہوسکتے ہیں، لہٰذا آپ ماہرین اطبا سے رجوع کریں، نیز چینی کی تشتری پر زعفران سے سورہٴ فاتحہ لکھ کر پانی سے دھوکر مریض کو پلائیں اور ہرنماز کے بعد مریض کی صحت کے لیے اللہ تعالیٰ سے خوب دل لگاکر دعا کریں، ان شاء اللہ بہت جلد مریض صحت یاب ہونے لگے گا۔


واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات