Pakistan

سوال # 163964

آخری تراویح میں آخری رکعت میں ختم القرآن کے بعدقیام کی حالت میں لمبی لمبی دعائیں باآواز رونا اور دعاؤاں میں ملک کے بادشاہ کے لیے دعا کرنا اور بعد میں رکوع کرنا ۔ کیا اس سے نماز مفسد نہیں ہوئی؟

Published on: Sep 19, 2018

جواب # 163964

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 1167-970/SN=1/1440



اگر دعائیں کلام ناس کے مشابہ نہ ہوں، نیز رونا جنت و جہنم وغیرہ کے ذکر یا رقتِ قلب وغیرہ کی بنا پر ہو تو صورت مسئولہ میں نماز فاسد تو نہ ہوگی؛ البتہ نماز میں اس طرح دعا کرنا مناسب نہیں بلکہ مکروہ ہے۔ (دیکھیں: فتاوی دارالعلوم: ۴/۱۹۸، سوال: ۱۸۰۱، سوال: ۱۸۲۔ اور خیر الفتاوی : ۲/۵۵۷، ط: ملتان) آپ نے جہاں یہ عمل دیکھا وہاں غالباً حنبلی مسلک پر عمل ہوتا ہوگا؛ کیونکہ حنبلی مسلک میں ختم قرآن کے موقع پر تراویح کی آخری رکعت میں دعائیں کرنا مشروع ہے۔ (دیکھیں: المغنی لابن قدامة: ۲/۱۲۶، رقم: ۱۱۰۱، فصل فی ختم القرآن فی الصلاة)۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات