Pakistan

سوال # 15395



میرے
والد صاحب نے گھر میں کچھ بچے کا سایہ دیکھا تھا لیکن وہاں کچھ بھی نہ تھا، اسی
طرح میری ہمشیرہ نے بھی آدھی رات کو اندھیرے میں کسی کے سائے کو دیکھا تھا۔گھر میں
کافی ٹینشن ہے اس چیز کو لے کر۔ہم نماز اور قرآن کی تلاوت بھی کرتے ہیں۔ ان چیزوں
نے ہمیں کبھی نقصان نہیں پہنچایا۔ ان سب چیزوں کی کیا حقیقت ہے؟ گھر والے جھاڑ
پھونک کروانے کو کہہ رہے ہیں۔میں اس چیز کے خلاف ہوں کہ یہ سب بکواس ہے۔ آپ مجھے
ان چیزوں کی حقیقت سے آگاہ کردیں؟



Published on: Aug 18, 2009

جواب # 15395

بسم الله الرحمن الرحيم



فتوی:
1353=1283/ب



 



سایہ
دیکھنے کی کوئی حقیقت نہیں، اس وہم کو ذہن سے سب کو نکال دینا چاہیے، جھاڑ پھونک
والوں کے پاس جاکر اپنے وہم کو مضبوط بنانے اور پیسے برباد کرنے کی کوئی ضرورت
نہیں، آپ سورہٴ بقرہ کا آخری حصہ آمَنَ الرَّسُوْلُ سے لے کر اخیر سورہ تک گھر میں
پڑھ لیا کریں، سارا وہم، وسوسہ دور ہوجائے گا۔




واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات