عقائد و ایمانیات - فرق ضالہ

India

سوال # 66564

(۱) اسلام میں گمراہ فرقہ کونسا کونسا ہے؟
(۲) کیا ان کے امام کے پیچھے نماز پڑھنا جائز ہے؟
(۳) کیا امت مسلمہ ۷۳ فرقوں میں پہنچ چکی ہے جس کی نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے پیشین گوئی فرمائی تھی۔

Published on: Jul 17, 2016

جواب # 66564

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 833-867/sd=10/1437



 اسلام میں گمراہ فرقہ وہ ہے، جو راہ حق اور صراط مستقیم سے ہٹا ہوا ہو، جو اہل السنة والجماعة کے مسلک سے منحرف ہو، جو دلائل اربعہ: قرآن، حدیث، اجماع اور قیاس میں سے کسی کی بھی حجیت کا منکر ہو، جو صحابہ کرام کو تنقید سے بالاتر نہ سمجھتا ہو۔

(۲) گمراہ فرقے کے امام کے پیچھے بعض صورتوں میں نماز ہوتی ہی نہیں ہے اور بعض صورتوں میں نماز تو ہوجاتی ہے؛ لیکن مکروہ ہوتی ہے۔

(۳) حدیث میں تہتر کا عدد تخصیص کے لیے نہیں ہے ؛ بلکہ اس سے مراد کثرت ہے، یعنی میری امت میں بہت سے فرقے ہونگے، جن کے مابین اصولِ دین میں اختلاف ہوگا، جس میں سے صرف وہ فرقہ جنت میں جائے گا، جو جماعة المسلمین، یعنی اہل السنة والجماعة کے طریقے پر ہوگا۔ (بذل المجہود : ۱۸/ ۱۱۷، کتاب السنة، ط: دار الکتب العلمیة، بیروت)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات