عقائد و ایمانیات - فرق ضالہ

India

سوال # 22104

کیا مہدوی حضرات کے نزدیک احادیث حجت ہیں یا وہ احادیث کا انکار کرتے ہیں۔

Published on: Jul 22, 2010

جواب # 22104

بسم الله الرحمن الرحيم

فتوی(ب):1084=898-6/1431

مہدوی حضرات اپنے عقائد باطلہ کی وجہ سے جو ان کی کتابوں میں ملتے ہیں وہ نصوصِ قطعیہ کے خلاف ہیں، اس لیے وہ دائرہٴ ایمان سے خارج ہیں، مثلاً وہ لوگ اپنے پیشوا میراں سید جونپوری کو مامور من اللہ مانتے ہیں، انھیں مثل نبی کے تمام خطاوٴں سے معصوم مانتے ہیں، اور انھیں مفترض الطاعة یعنی ان کی اطاعت کرنا واجب مانتے ہیں۔ یہ قرآن وحدیث کے خلاف ہے اور صریح کفر ہے۔ وہ لوگ نبوت وولایت میں سید محمد جونپوری کو نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ ایسا شریک ، ہمسر جانتے ہیں کہ ان پر درود شریف بھیجتے ہیں۔ ان کی بیویوں کو ازواج مطہرات کہتے ہیں، ان کے معتمدین کو خلفائے راشدین کہتے ہیں، ان کے احباب کو صحابہٴ کرام کہتے ہیں، وغیرہ وغیرہ۔ اور بہت سارے ان کے غلط عقائد ہیں، آپ اس کے لیے ”مطالعہٴ مہدویت“ دیکھئے، ایسے کافر ومرتد کے بارے میں آپ یہ سوال کرتے ہیں کہ ان کے نزدیک احادیث حجت ہیں یا وہ احادیث کا انکار کرتے ہیں۔ احادیث کو ماننے والا کیا ایسا عقیدہ رکھ سکتا ہے؟


واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات