عبادات - احکام میت

India

سوال # 146879

کچھ لوگوں کا کہنا ہے کہ عورت انتقال کے بعد اپنے شوہر کے لئے غیر محرم ہو جاتی ہے ،جس کے بعد شوہر کو بیوی کا منہ دیکھنے ، غسل دینے یا قبر میں اتارنے کی اجازت نہیں ہوتی،قرآن و حدیث کی روشنی میں جواب مرحمت فرمائیں۔

Published on: Dec 22, 2016

جواب # 146879

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 227-172/sd=3/1438



 



بیوی کے انتقال کے بعد شوہر کے لیے اسے غسل دینا جائز نہیں ہے ، ہاں بیوی کا چہرا دیکھنا اور اسے قبر میں اتارنا جائز ہے؛ لیکن بہتر یہ ہے کہ بیوی کے محارم ( باپ، بیٹا، بھائی، چچا، ماموں وغیرہ میں سے کوئی) اس کو قبر میں اتارے ۔ قال الحصکفي : وینمع زوجہا من غسلہا و مسہا لا من النظر الیہا علی الأرجح۔ (الد المختار مع رد المحتار : ۳/۹۰، باب صلاة الجنازة ، ط: زکریا ) وذو الرحم المحرم أولی بادخال المرأة من غیرہم، وکذا ذو الرحم غیر المحرم أولی من الأجنبي ۔ (الفتاوی الہندیة :۱/۲۲۷، کتاب الصلاة، باب الجنائز، الفصل السادس في القبر والدفن والنقل من مکان الی مکان، ط: زکریا )



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات