عقائد و ایمانیات - دعوت و تبلیغ

India

سوال # 6922

میں تبلیغی جماعت سے ہوں اور مجھے یہ پوچھنا ہے کہ ہم لوگ چالیس دن کی جماعت یا چار مہینے کی جماعت میں نکلتے ہیں کیا یہ کسی حدیث سے وارد ہے اور اس کی سند کیا ہے؟

Published on: Aug 28, 2008

جواب # 6922

بسم الله الرحمن الرحيم

فتوی: 1361=1276/ د


 


عن أبي ہریرة في حدیث الطویل․․․․ ومن سلک طریقًا یلتمس فیہ علمًا سھل اللہ لہ بہ طریقًا إلی الجنة وما اجتمع قوم في بیت من بیوت اللہ یتلون کتاب اللہ ویتدارسون بینھم إلا نزلت علیھم السکینة إلی آخر الحدیث (مشکاة: ص۳۲) وعن أنس قال قال رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم من خرج في طلب العلم فھو في سبیل اللہ حتی یرجع رواہ الترمذي والدارمي مشکاة:۳۴، احادیث مذکورہ اور اس کے علاوہ بھی احادیث سے دین اورعلم دین سیکھنے سکھانے کے لیے نکلنے کی فضیلت ثابت ہے۔ اور چالیس دن اور چار ماہ کو تاثیر میں خاص دخل ہے اس کا لحاظ کرتے ہوئے چار ماہ اور چالیس دن کی تحدید کی گئی ہے۔ ورنہ احادیث سے ایسی کوئی تحدید ثابت نہیں ہے۔


واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات