عقائد و ایمانیات - دعوت و تبلیغ

Saudi Arabia

سوال # 163075

میں سعودی عرب میں کام کررہاہوں اور ہم اذان کے وقت کے حساب سے مائکروفون پہ اذان کی گھڑی فکس کردیتے ہیں جس میں اذان ہوتی ہے اور دس منٹ کے بعد سبھی لوگ آتے ہیں اور نماز پڑھتے ہیں تو کیا درست ہے یا کسی شخص کو اذان دینی چاہئے؟ جزاک اللہ خیرا

Published on: Aug 8, 2018

جواب # 163075

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:1025-879/sn=11/1439



اذان کی گھڑی یا کسی آلہ کے ذریعہ ریکاڈ شدہ اذان کے کلمات سنوادینے سے اذان کی سنت ادا نہ ہوگی، ادائیگیٴ سنت کے لیے ضروری ہے کہ کوئی شخص اپنی زبان سے مائکرو فون پر یا بغیر مائکرو فون کے کلماتِ اذان کہے؛ لہّٰا صورت مسئولہ میں آپ لوگوں کا طریقہ درست نہیں ہے، آپ لوگوں میں سے کسی شخص کو اذان کہنی چاہیے، تبھی اذان کی سنت ادا ہوگی۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات