معاملات - بیع و تجارت

K S A

سوال # 160911

عرض ہے کہ مجھے کمپنی نے ویزے دیے تھے جو کہ میں نے ان ویزوں کو اپنے رشتہ داروں کو بیج دیے تھے جو کہ باہر کے قیمت سے زیادہ کم ریٹ پردیے اس لیے کہ رشتہ ہے ان لوگوں کو کسی کے ذریعے بتایا تھا کہ اتنی قیمت ہوگی تو سب نے خوشی سے قبول کر لیا تھا، اب اگر میں رقم کا مطالبہ کرتا ہوں تو وہ رقم دینے کہ لیے تیار نہیں ہیں ، سوال ۱ ان لوگوں کو یہ رقم دینی چاہئے یا نہیں؟ اس میں سے تھوڑ ی رقم ملی ہے ۔
سوال ۲ کیا یہ ویزوں کی رقم مجھے لینی جائز ہے ؟
(نوٹ) ان ویزوں پر ھدیہ اور جیب خرچ کے لیے تھوڑا خرچہ آیا ہوگا- شریعت کے مطابق مجھے کیا کرنا چاہئے ؟

Published on: Apr 28, 2018

جواب # 160911

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:996-803/sd=8/1439



(۱، ۲)سوال پورے طور پر واضح نہیں ہے ، بہرحال ! اگر منشا یہ ہے کہ آپ نے اپنے رشتہ داروں کو ویزے فروخت کردیے تھے اور رشتہ دار ویزے لینے کے بعد قیمت اداء نہیں کر رہے ہیں ، تو شرعا وہ گنہگار ہوں گے ، آپ کو اپنے فروخت کیے ہوئے ویزوں کی قیمت لینے کا شرعا حق حاصل ہے اور اگر کم قیمت پر فروخت کرنے کے بعد آپ زیادہ قیمت لینا چاہتے ہیں ، تو خرید و فروخت مکمل ہونے کے بعد زیادہ قیمت لینے کا حق نہیں ہے ، اگر منشا سوال کچھ اور ہو، تو وضاحت کر کے دوبارہ معلوم کرلیں ۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات