معاملات - بیع و تجارت

india

سوال # 153584

کیا فرماتے ہیں علمائدین مسئلہ دین کے بارے میں کہ ایک مسلمان شخص ہندو کے تیوہار رکشابندھن میں راکھی بیچتا ہے تو کیا اس کی فروخت جائز ہے ؟ اور اس کی کمائی جائز ہے ؟ اور اگر ناجائز ہے اور اسے پتہ نہیں تھا کہ بیچناکیسا ہے اور وہ سامان لا چکا ہے اور اب واپس بھی نہیں ہوگا تو ایسی صورت میں کیا کرے ؟
براہ کرم، جواب مدلل تحریر فرمادیں۔

Published on: Aug 17, 2017

جواب # 153584

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa: 1268-1176/sd=11/1438



راکھی میں جو چیز لگائی جاتی ہے ، چونکہ وہ فی نفسہ نجس اور حرام نہیں ہوتی، اس لیے اس کی بیع اور آمدنی کو حرام نہیں کہا جائے گا، تاہم بہتر یہی ہے کہ مسلمان ایسی چیزوں کے فروخت کرنے سے اجتناب کرے ۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات