Prayers & Duties >> Jumuah & Eid Prayers

Question # : 58746

India

ہمارے گاؤں میں سارے لوگ جمعہ کی نماز پڑھتے ہیں سوائے دس لوگوں کے وہ لوگ ظہر کی نماز پڑھتے ہیں اور ایسا مدتوں ہوتاآرہا ہے جب کہ ہمارے گاؤں میں جمعہ کی پوری شرطیں نہیں پائی جاتی ہیں ، ہمارے گاؤں کی آبادی ۱۸۰۰ ہے اور دوسرے گاؤں کے لوگ بھی جمعہ کی نماز پڑھنے کے لیے آتے ہیں ، اب ایسی صورت حال میں سارے گاؤں والے جمعہ پڑھیں یا ظہر ؟ یا موجودہ شکل بہتر ہے؟

Answer : 58746

Published on: Apr 20, 2015

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 515-507/N=6/1436-U

اگر آپ کا گاوٴں چھوٹا گاوٴں ہے، یعنی: مرد وعورت، جوان، بوڑھے، بچے اور مسلم وغیرمسلم سب ملاکر اس کی کل آبادی صرف ۱۸/ سو ہے اور وہ کسی طرح بھی قصبہ سا نہیں لگتا ہے تواس میں جمعہ کی نماز درست نہیں، تمام گاوٴں والوں کو عام دنوں کی طرح جمعہ کے دن بھی ظہر کی نماز باجماعت ادا کرنی چاہیے، جمعہ جائز نہ ہونے کے باوجود جمعہ کے لیے تکلف نہ کرنا چاہیے۔
ویسے صورت مسئولہ میں احوط وبہتر یہ ہے کہ علاقہ کے کسی معتبر وبڑے دارالافتاء سے کم ازکم دو مفتیانِ کرام کو بلاکر پورے گاوٴں کا تفصیلی معائنہ کرائیں، وہ معائنہ کے بعد گاوٴں کی صحیح واقعی صورت حال سمجھ کر شرعی بنیادوں پر جو فتوی دیں، گاوٴں کے سب مسلم مرد حضرات اس کے مطابق عمل کریں۔


Allah knows Best!


Darul Ifta,
Darul Uloom Deoband

Related Question